3.22.2020

جو شخص رمضان المبارک کی خبر سب سے پہلے دے کیا اس پر جہنم کی آگ حرام ہو جاتی ہے


              اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُه

سوال کیا فرماتے ہیں علماٸے کرام مسئلہ ذیل کے بارٸے میں کہ جو شخص رمضان شريف کی خبر سب سے پہلے کسی کو دے اس کے لۓ جہنم کی آگ حرام کردي جاتی ہے کيا يہ بات درست ہے؟ حوالہ کے ساتھ جواب عنايت فرماٸيں بڑی نوازش ہوگی
ساٸل محمد قمرالدین قادری بمقام گیناپور ضلع بہراٸچ شریف یوپی
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
             وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

                 الجواب بعون الملک الوہاب 

کسی چیز کی خبر دینے سے جہنم کی آگ حرام نہیں ہوجاتی ہے اگر ایسا ہوتا تو نماز روزہ دیگر عبادت کی کیا ضرورت ہوتی خبر دیتے رہو جنتی بنتے رہو یہ کسی بیوقوف جاہل کا کام ہے اور اسکا یہ کہنا کہ جہنم کی آگ حرام میں کہتا ہوں کہ اس پر جہنم کی آگ حرام نہیں بلکہ وہ خود جہنم کا مستحق ہورہا ہے کیونکہ حدیث شریف میں ہے حَدَّثَنَا أَبُو مَعْمَرٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَارِثِ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَبْدِ الْعَزِيزِ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ أَنَسٌ :‏‏‏‏ إِنَّهُ لَيَمْنَعُنِي أَنْ أُحَدِّثَكُمْ حَدِيثًا كَثِيرًا، ‏‏‏‏‏‏أَنّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ مَنْ تَعَمَّدَ عَلَيَّ كَذِبًا فَلْيَتَبَوَّأْ مَقْعَدَهُ مِنَ النَّارِ.ترجمہ: ہم سے ابومعمر نے بیان کیا، ان سے عبدالوارث نے عبدالعزیز کے واسطے سے نقل کیا کہ انس (رضی اللہ عنہ) فرماتے تھے کہ مجھے بہت سی حدیثیں بیان کرنے سے یہ بات روکتی ہے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا کہ جو شخص مجھ پر جان بوجھ کر جھوٹ باندھے تو وہ اپنا ٹھکانا جہنم میں بنا لے۔(صحیح بخاری کتاب: علم کا بیان حدیث نمبر: 108)

                        واللہ اعلم بالصواب 

کتبہ ناچیز محمد شفیق رضا رضوی خطیب و امام سنّی جامع مسجد حضرت منصور شاہ رحمۃ اللہ علیہ بس اسٹاپ کشن پور الھند

الجواب صحیح والمجیب نجیح فقط تاج محمد حنفی قادری واحدی صاحب 

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only