3.16.2020

کیا اکیلے نماز پڑھنے والا تکبیر پڑھیں گا


             _اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎

کیا فرماتے ہیں علماٸے کرام و مفتیان کرام اس مسٸلہ ذیل کے بارے میں کہ اگر اکیلے امام صاحب فرض نماز پڑھ رہے ہوں تو تکبیر پڑھنا ضروری ہے یا نہیں جب کہ معلوم ہو کہ مجھے نماز پڑھنے کے درميان کوٸی دوسرا شخص بھی آسکتا ہے تو اگر تکبیر نہ کہی اور دوسرا شخص آکر نماز میں شامل ہوگیا تو نماز کا کیا حکم ہے*جواب عنایت فرماکر شکریہ کا موقع عنایت کریں

ساٸل۔محمد قمرالدین قادری بمقام گیناپور ضلع بہراٸچ شریف یوپی
___________________________________________
              وعلیکم السلام ورحمتہ وبرکاتہ

              الجوابـــــ بعون الملکـــــ الوھاب

 مسجد محلہ میں نماز ادا ہو جانے کے بعد اگر اکیلا نماز پڑھتا ہے تو اسے اذان و اقامت کہنا مکروہ ہے اور اگر ابھی جماعت نہیں ہوئی ہے اور جماعت کے لئے مقتدی بھی نہیں ہے پھر کوئی اکیلا نماز پڑھنے لگا تو اسے چاہئے کہ اقامت بھی کہے اور اگر اقامت نہیں کہا بغیر اقامت کے نماز ادا کی تو نماز ہوجائے گی مگر مکروہ تنزیہی ہوگی کہ اقامت کا کہنا سنت ہے اور سنت کا ترک مکروہ تنزیہی ہے (کتب فقہ) 

                واللہ تعالیٰ اعلم باالــــــصـــــواب

کتبـــــــــــــــــــــــــہ ناچیز محمد شفیق رضا رضوی خطیب و امام سنّی جامع مسجد حضرت منصور شاہ رحمۃ اللہ علیہ بس اسٹاپ کشن پور الھند

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only