قرآن مجید دیکھ کر لقمہ دینا کیسا ہے


             السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

علماء کرام کی بارگاہ میں ایک سوال ہے کہ نماز میں قرآن شریف دیکھ کر لقمہ دینا از روۓ شرع کیسا ہے جواب عنایت فرما ۓ مع حوالہ 

     فقیر محمد حسن رضا قادری کٹیہار بہار 
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
         وعلیکم السلام ورحمة الله وبركاته

             الجواب بعون الملک الوھاب

حالت نماز میں لقمہ دینے والے کو اس بات کی اِجازت نہیں کہ وہ قراٰنِ پاک دیکھ کر لقمہ دے کہ مصحف دیکھ کر لقمہ دینا ، لقمہ دینے والے کی نماز کو فاسِد کر دیتا ہے کہ نماز میں مصحف شریف سے دیکھ کر قراٰن پڑھنا مُطلقاً مُفسدِ نماز ہے یوں ہی اگر محراب و غیرہ میں لکھا ہو اسے دیکھ کر پڑھنا بھی مُفسدِنماز ہے ۔ہاں اگر یاد پر پڑھتا ہو مصحف یا محراب پر فقط نظرپڑ گئی تو حَرج نہیں (در مختار٬ ردالمحتار ص ۳۸۴ ج ۲مکتبہ امدادیہ ملتان )چنانچہ جس صورت میں اس کی نماز ٹوٹ جاتی ہے اس نے امام کو لقمہ دیا تو اس کی نماز بھی گئی کہ اس کے مصحف و غیرہ سے دیکھ کر نماز پڑھتے ہی خود اس کی نماز فاسِد ہو گئی اور وہ نماز سے خارج ہو گیا اور نماز سے خارج کا لقمہ لینے پر امام کی نماز بھی فاسِد ہو گئی ۔ (بحوالہ نمازمیں لقمہ دینے کے مَسائل “صفحہ ۲۵)(مکتبة المدینہ دعوت اسلامی)

               واللہ تعالی اعلم بالصواب

کتبـــــــــــــہمحمـــد معصـوم رضا نوری عفی عنہمنگلور کرناٹک انڈیا ۱۲/ رمضان المبارک ۱۴۴۱؁ ہجری ۶/ مئی ۰۲۰۲؁ عیسوی بروز بدھ

ایک تبصرہ شائع کریں

1 تبصرے

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ