6.17.2020

کیا مالک نصاب پر ہر سال قربانی کرنا ضروری ہے؟


              السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکا تہ

کیا فرما تے ہیں ہیں علمائے کرام اس مسئلہ میں کہ کیا مالک نصاب پر لازم ہے کہ ہرسال اپنے نام سے قربا نی کرے؟بعض لوگ ایک سال اپنے نام سے کرتے ہیں اور دوسرے سال بیوی کے نام سے پھر تیسرے سال بچوں کے نام سے کیا یہ درست ہے؟بینوا توجروا                                                        

                 المستفتی:۔رجب علی قادری بہار
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
                وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکا تہ

                    الجواب بعون المک الوہاب

مالک نصاب پر لازم ہے کہ ہرسال اپنے نام سے قربانی کرے جیسے ہر سال زکوۃ وفطرہ لازم ہے یونہی قربا نی بھی اگر اپنے نام سے نہ کرکے بیوی بچوں کے نام قربانی کرے گا یا بزرگان دین کے نام قربانی کرے گا توترک واجب کے سبب گنہگار ہوگا۔ علامہ صدر الشریعہ علیہ الرحمہ تحریر فرما تے ہیں کہ جس پر قربانی واجب ہے اس کو خود اپنی نام سے کرنی چا ہئے لڑکے یا زوجہ کی طرف سے کرے گا توواجب ساقط نہ ہو گا۔اپنے نام سے کرنے کے بعد جتنی قربا نیاں کرے مضائقہ نہیں۔مگر واجب کو ادا نہ کرنا اور دوسروں کی طرف سے نفل ادا کرنا بڑی غلطی ہے۔(فتا ویٰ امجدیہ جلد سوم ص ۳۱۵/مکتبہ رضویہ)

                         واللہ اعلم بالصواب

کتبہ فقیر تاج محمد قادری واحدی ۲۰/ شوال المکرم ۱۴۴۱ھ ۱۳/ جون ۲۰۲۰ بروز سنیچر

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only