10.26.2020

شیطان فرشتہ تھا یا جن



 اَلسَّــلَامْ عَلَیْڪُمْ وَرَحْمَةُ اللہِ وَبَرَڪَاتُہْ 

کیا فرماتے ہیں علماء کرام و مفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ کیا شیطان فرشتہ تھا یا جن جواب عنا یت فرمائیں عین نوازش ہوگی


ساںٔل محمد حسنین رضا ازہری پیلی بھیت شریف یوپی

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرْکَتَہُ

الجواب بعون الملک الوھاب

پہلی بات تو یہ ہے شیطان کی دو قسمیں ہیں جیسا کہ صدر الافاضل حضرت مولانا سیدمحمد نعیم الدین مراد آبادی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ الْہَادِی (اَ لْمُتَوَفّٰی۱۳۶۷ھ) تفسیر خزائن العرفان میں لکھتے ہیں شیطان دو قسم کے ہوتے ہیں ایک جنوں میں سے ایک انسانوں میں سے جیسا کہ قراٰن پاک میں ہے{شَیٰطِینَ الاِنْسِ وَالْجِنِّ }(ترجمۂ کنزالایمان آدمیوں اور جنوں میں کے شیطان (پ ۸ الانعام ۱۱۲) (خزائن العرفان پ۲۴ حم السجدۃ زیرآیت۲۹)لیکن ابلیس ملعون جناتوں میں سے تھا جیسا کہ قرآن مجید میں ارشاد باری تعالیٰ ہے کہ فَسَجَدُوْۤا اِلَّاۤ اِبْلِیْسَؕ كَانَ مِنَ الْجِنِّ (پ۱۵ الکہف۵۰) ترجمۂ کنزالایمان : تو سب نے سجدہ کیا سوا ابلیس کے قومِ جن سے تھا حضرتِ علّامہ جلا ل الدین سُیُوطِی الشّافِعی عَلَیْہِ رَحمَۃُ اللّٰہ ِالْقَوِی (اَ لْمُتَوَفّٰی۹۱۱ھ) نقل کرتے ہیں شیاطین جنات ہی کی نافرمان قسم کا نام ہے جو ابلیس کی اولاد سے ہیں (لَقْطُ الْمَرْجَانِ فِیْ اَحْکَامِ الَجَانِّ ذکر وجودھم ص۲۴)نوٹ جیسا کہ قرآن مجید سے واضح ہو گیا کہ ابلیس معلوم جنات ہے


واللہ و رسولہ اعلم باالصواب


کتبـــــــــــــــــــــــــــہ العبـــد خاکســـار ناچیـــز محمـــد شفیـــق رضـــا رضـــوی خطیـــب و امـــام سنّـــی مسجـــد حضـــرت منصـــور شـــاہ رحمتـــ اللـــہ علیـــہ بـــس اسٹاپـــ کشـــن پـــور الھنـــد

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only