میت کی پیشانی پر کلمہ شریف لکھنا کیسا ہے





          السلام وعلیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام کی بارگاہ میں ایک سوال عرض ہیکہ کیا مردے کی پیشانی پر پہلا کلمہ لکھنا چاہیے یا نہیں جواب عنایت فرمائیں 

              سائل محمد جابر علی گونڈہ

....................................................................... 

       وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

            الجواب بعون الملک الوہاب

مردےکی پیشانی پربسم اللہ شریف لکھےاورسینے پرکلمہ طیبہ لکھے جس کی وجہ سےمردےکی مغفرت کی امیدہے
جیساکہ سرکارصدرالشریعہ علیہ الرحمہ درمختارکےحوالےسے فرماتےہیں
کہ درمختارمیں کفن پرعہدنامہ لکھنےکوجائزکہاہےاورفرمایاکہ اس سےمغفرت کی امیدہےاورمیت کےسینہ اورپیشانی پربسم اللہ الرحمن الرحیم لکھناجائزہےایک شخص نے اس کی وصیت کی تھی انتقال کےبعدسینہ اورپیشانی پربسم اللہ شریف لکھدی گئی پھرکسی نےانھیں خواب میں دیکھاحال پوچھاکہاجب میں رکھاگیاعزاب کےفرشتےآئےفرشتوں نےجب پیشانی پربسم اللہ شریف لکھی دیکھی کہاتوعزاب سےبچ گیا یوں بھی ہوسکتاہے کہ پیشانی پربسم اللہ شریف لکھیں اورسینہ پرکلمہ طیبہ لکھیں ۔۔مگرنہلانےکےبعدکفن پہنانےسےپیشترکلمہ کی انگلی سےلکھیں روشنائی سےنہ لکھیں بہارشریعت جلداول حصہ چہارم صفحہ 160نوٹ اوراگرعورت کی پیشانی پرلکھناہوتومحارم میں سےکوئی لکھیں اجنبی مرد نہ لکھیں بحوالہ۔۔بسترعلالت سےقبرتک ::کفن پہنانےکاطریقہ

             واللہ تعالیٰ اعلم باالــــــصـــــواب 

        محمدافسررضاحشمتی سعدی عفی عنہ

           اســـلامی مـــعلــومـات گـــــروپ 

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے