کیا دکھتی آنکھ کا آنسو ناپاک ہے؟؟؟



          الســـلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

زید کی آنکھ دکھ رہی تھی اوراسی حالت میں  زید نماز پڑھنے لگا پھر آنکھ سے پانی ٹپکنے لگا زید نے اس پانی کو اپنی کپڑے میں لگا لیا تو نماز ہو ئی یا نہیں دلیل کے ساتھ جواب عنایت فرماۓ 

         المستفتی ساجد رضا رضوی گونڈہ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
           و علیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

               الجواب بعون ملک الوھاب 

صورت مسئولہ میں نماز نہ ہوئی کیوں کہ دکھتی آنکھ سے آنسو کا بہنا یہ ناقص وضو ہے جیسا کہ سرکار صدر الشریعہ علیہ الرحمہ بہار شریعت میں در مختار و رد محتار کے حوالے سے تحریر فرماتے ہیں کہ آنکھ دکھنے میں جو آنسو بہتا ہے وہ نجس و ناقض وضو ہے اس سے احتیاط کرنا چاہئے الدرالمختار و ردالمحتار کتاب الطھارة جلد اول ص ٢٩ بحوالہ بہار شریعت حصہ دوم بیان وضو ٣١٠ اورجب دکھتی آنکھ سے آنسوکا نکلنا نواقض وضو ہے تو وضو ٹوٹ گیا تو بغیر وضو کے نماز کہاں ہوگی پھر اس کو کپڑے میں پوچھ لیا اگر ایک درہم کے برابر یا زائد لگا تو وہ کپڑا بھی نجس ہوگیا کہ اب صرف وضو سے بھی نماز نہ ہوگی بلکہ کپڑا بھی دھلنا یا بدلنا ہوگا. 

                 واللہ تعالی اعلم باالصواب 

                 انیس الرحمن حنفی رضوی

                   اسلامی معلومات گروپ 

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے