3.13.2020

کیا حیض والی عورت پر نماز روزہ معاف ہے


             السلام عليكم ورحمۃ اللہ و برکاتہ

 کیافرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ ماہ رمضان المبارک میں حیض کی بناء پر عورتوں سے جو دو تین یا پانچ روزے اور نمازیں چھوٹ جاتی ہیں ان کے بارے میں شرعی حکم کیا مفصل جواب قرآن و حدیث سے عنایت فرمائیں عین و کرم ھوگا

           سائل محمد حامد رضا قادری بلرام پور
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ              وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

                 الجواب بعون الملک الوہاب 

حیض کی حالت میں روزہ رکھناحرام ہے رمضان المبارک میں حیض آنےکی وجہ سےعورتوں سے جوروزیں اورنمازیں. ترک ہوتی ہیں ان دنوں کی نمازوں کی قضانہیں ہے لیکن روزوں کی قضااوردنوں میں فرض ہےکہ اگرروزوں کی قضانہیں کرےگی توگنہگارہوگی جیساکہ مختصرالقدوری میں ہےوالحیض یسقط عن الحائض الصلوۃ ویحرم علیھاالصوم وتقضی الصوم ولاتقضی الصلوٰۃمختصرالقدوری باب الحیض اوراسی طرح سرکارصدرالشریعہ علیہ الرحمہ فرماتے ہیں کہ حالت حیض میں روزہ رکھنااورنمازپڑھناحرام ہےان دنوں میں نمازیں معاف ہیں ان کی قضابھی نہیں ہے اور روزوں کی قضااوردنوں میں رکھنافرض ہےبہارشریعت حصہ دوم حیض ونفاس کابیان 

               واللہ تعالیٰ اعلم باالــــــصـــــواب 
کتبـــــــــــــــــــــــــہ محمدافسررضاحشمتی سعدی عفی عنہ 

             اســـلامی مـــعلــومـات گـــــروپ 
  1. Assalamu alaikum
    Waaqai kaafi asardar hai.
    Shukriya aise group ke liye.

    جواب دیںحذف کریں
    جوابات
    1. جزاک اللہ خیرا کثیرا میرے پیارے محسن اللہ تبارک و تعالیٰ ہم سب کو راہ راست پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے آمین ثم آمین یا رب العالمین

      حذف کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only