ظہر کی دوسری رکعت کے قاعدے میں بیٹھنا بھول جائے تو کیا کریں


           السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

کیا فرماتے ہیں علماٸے کرام و مفتیان کرام اس مسٸلہ کے بارے میں کہ اگر کوئی شخص ظہر کی دوسری رکعت کے قاعدے میں بیٹھنا بھول جائے تو کیا کریں برائے کرم جواب عنایت فرمائیں عین نوازش ہوگی 

        الســــاٸل محمد شریف نوری مقام دتولی
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
             وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

                  الجواب بعون الملک الوہاب 

اگرکوئی شخص فرض نمازمیں قعدہ اولیٰ بھول جائے تو جب تک ابھی سیدھاکھڑانہ ہواہولوٹ آئے قعدہ اولیٰ کوپوراکرےاورایساکرنےپرسجدہ سہوا نہیں اوراگرسیدھاکھڑاہوگیاتواب نہ لوٹےبلکہ آخرمیں سجدہ سہواکرلےنمازہوجائےگی جیساکہ سرکارصدرالشریعہ علیہ الرحمہ فرماتے ہیں فرض میں قعدۂ اولیٰ بھول گیا توجب تک سیدھا کھڑا نہ ہوا، لوٹ آئے اور سجدۂ سہو نہیں اور اگر سیدھا کھڑا ہو گیا تو نہ لوٹے اور آخر میں سجدۂ سہو کرے اور اگر سیدھا کھڑا ہو کر لوٹا تو سجدۂ سہو کرے اور صحیح مذہب میں نماز ہوجائے گی مگر گنہگار ہوا لہٰذا حکم ہے کہ اگر لوٹے تو فوراً کھڑا ہوجائےبہارشریعت جلداول حصہ چہارم سجدہ سہوا کابیان صفحہ 51

                   واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب 

کتبـــــــــــــــــــــــــہ محمدافسررضاحشمتی سعدی عفی عنہ

             اســـلامی مـــعلــومـات گـــــروپ 

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے