بغیر سحری کے روزہ رکھنا از روئے شرع کیســـاھے


               اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎

کیا فرما تے ہیں علماۓ کرام ومفتیان عظام اس مسٸلے کے بارے میں کہ بنا سحری کۓ روزہ رکھنا کیسا ہے جبکہ روزہ رکھنے والا بولتا ہے کہ می نے عشاء کے بعد کھانا کھا کے نیت کر لی تھی تو کیا ایسا کرنے سے روزے کا پوراثواب ملے گا یا نہیں علماۓ کرام کرم فرماٸیں 

               ساٸل۔محمدعثمان قادری ممبٸ
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
             وعلیکم السلام ورحمة الله وبركاته 

                 الجواب بعون الملک الوہاب

صورت مسئولہ میں روزے کا پورا ثواب ملے گا بغیر سحری کئے بھی روزہ رکھ سکتے ہیں مگر قصدا سحری ترک نہیں کرنا چاہئیے _ سحری کرنا حضور نبئ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت ہے اور باعث برکت ہے بہار شریعت میں حضور صدرالشریعہ علیہ الرحمہ حدیث شریف کے حوالے سے تحریر فرماتے ہیں بخاری ومسلم و ترمذی و نسائی و ابن ماجہ انس رضی اﷲ تعالیٰ عنہ سے راوی، رسول اﷲ صلی اﷲ تعالیٰ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’سحری کھاؤ کہ سحری کھانے میں برکت ہے۔‘‘  (صحیح بخاری )مسلم و ابو داود و ترمذی و نسائی و ابن خزیمہ عمرو بن عاص رضی اﷲ تعالیٰ عنہ سے راوی، رسول اﷲ صلی اﷲ تعالیٰ علیہ وسلم نے فرمایاہمارے اور اہلِ کتاب کے روزوں میں فرق سحری کا لقمہ ہے(المعجم کبیر )  امام احمد ابوسعید خدری رضی اﷲ تعالیٰ عنہ سے راوی، کہ رسول اﷲ صلی اﷲ تعالیٰ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’سحری کُل کی کُل برکت ہے اُسے نہ چھوڑنا، اگرچہ ایک گھونٹ پانی ہی پی لے کیونکہ سحری کھانے والوں پر اﷲ (عزوجل) اور اس کے فرشتے دُرود بھیجتے ہیں ۔‘‘ نیز عبداﷲ بن عمرو سائب بن یزید و ابو ہریرہ رضی اﷲ تعالیٰ عنہم سے بھی اسی قسم کی روایتیں آئیں ۔(مسند امام احمد بن حنبل){بہار شریعت حصہ پنجم سحری و افطار کا بیان }

                   واللہ ورسولہ اعلم باالصواب 

کتبـــــــــــــــــــــــــہ محمـــد معصـوم رضا نوری عفی عنہ منگلور کرناٹک انڈیا) ۲۶ رجب المرجب ١٤٤١؁ھ_

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے