4.15.2020

جو یہ کہے کہ مسلمان اور کافر یکساں ہیں تو انکے لئے کیا حکم ہے

              السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ اگر کوئی شخص یہ کہے کہ مسلمان اور کافر یکساں ہیں اور کچھ افراد بھی انکا ساتھ دے رہے ہیں تو ان لوگوں کے لئے کیا حکم ہے براے مہربانی جواب عنایت فرمایں عین نوازش ہوگی 

              سائل محمد عطا وارث رضوی
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
         وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

          الجوابـــــ بعون الملکـــــ الوھاب  

ایسے شخص کی یہ باتیں کُفرِیّات سے بھر پور ہیں وہ شخص اور جو معنیٰ سمجھنے کے باوُجُود تائید میں سر ہِلا رہے تھے وہ سب کافِرو مُرتَد ہو گئے ان پر تجدید ایمان اورشادی شدہ ہوں تو تجدید نکاح لازم ہےکیونکہ اللہ عَزَّوَجَلَّ کے یہاں سب انسان ہرگز برابر نہیں ۔ اللہ عَزَّوَجَلَّ پارہ 28 سُورۃُ الحَشْر کی آیت نمبر 20میں ارشاد فرماتا ہے :لَا یَسْتَوِیْۤ اَصْحٰبُ النَّارِ وَ اَصْحٰبُ الْجَنَّةِؕ-ترجَمۂ کنزالایمان : دوزخ والے اور جنّت والے برابر نہیں ۔اورپارہ 2 سُورَۃُ البَقَرَہ آیت نمبر221 میں ارشادِ ربانی ہے (وَ لَعَبْدٌ مُّؤْمِنٌ خَیْرٌ مِّنْ مُّشْرِكٍ وَّ لَوْ اَعْجَبَكُمْؕ-ترجَمۂ کنزالایمان : بے شک مسلمان غلام، مُشرِ ک سے اچّھا ہے اگرچِہ وہ تمہیں بھاتا ہو ۔

                 واللّٰہ ورسولہ اعلم باالصواب

کتبہ ناچیز محمد شفیق رضا رضوی خطیب و امام سنّی مسجد حضرت منصور شاہ رحمت اللہ علیہ بس اسٹاپ کشن پور الھند

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only