6.26.2020

ٹیچر ڈے منانا از روئے شرع کیســـاھے

     
             
                 اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ ٹیچر ڈے منانا کیسا ہے مکمل جواب عنایت فرماۓ مہربانی ہوگی آپ کی فقط والسلام

        سائل محمد شاکر رضوی جہاں آباد یو پی الھند
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
                 وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ

                الجـــــــواب بعون الملکـــــ الوھاب

صورت مسؤلہ میں جواب یہ ہے کہ یوم اساتذہ منانا جائز ہے خواہ وہ کسی بھی تاریخ میں ہو کہ اس میں اساتذہ کی تعظیم اور انکے شکر و احسان کی بجا آوری ہے اور اپنے استاد کی تعظیم جس طرح بھی کی جائے درست اور جائز ہے اعلیٰ حضرت الشاہ امام احمد رضا خان فاضلِ بریلوی علیہ الرحمہ تحریر فرماتے ہیں کہ استاد علم دین کا مرتبہ ماں باپ سے زیادہ ہے وہ مربی بدن ہیں یہ مربی روح جو نسبت روح کو بدن سے ہے وہی نسبت استاد سے ماں باپ کو ہے کما نص علیہ الملامتہ الشر مبلالی فی غنیتہ ذوی الاحکام و قل فیہ ذا ابو الروح لا ابو النطف (فتاویٰ رضویہ شریف جلد 09 نصف آخر صفحہ نمبر 141) لیکن نابالغ بچے اپنا روپیہ چندہ میں نہیں دے سکتے البتہ گھر والے جو چندہ دے اسے پہنچا سکتے ہیں جیسا کہ (درالمختار مع شامی جلد 05 صفحہ نمبر 687) پر ہے کہ لا تصح ھبتہ الصغیرۃ اھ (نوٹ) دور حاضر میں نائب قاضی ہندوستان کی سرپرستی میں جامعہ امجدیہ رضویہ گھوسی میں ہر سال 2 ذی القعدہ کو یوم اساتذہ منایا جاتا ہے جو ممتاز الفقہ سلطان المناظرین محدث کبیر مد ظلہ العالی و النورانی کی سرپرستی میں منایا جاتا ہے) بحوالہ فتاویٰ فقیہ ملت جلد 02 صفحہ نمبر 280/281)

                     واللّٰہ ورسولہ اعلم باالصواب

کتبہ العبد ناچیز محمد شفیق رضا رضوی خطیب و امام سنّی مسجد حضرت منصور شاہ رحمت اللہ علیہ بس اسٹاپ کشن پور الھند

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only