6.20.2020

غیر مسلم کے گھر نماز پڑھنا ؟؟


                   السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ 

علماءکرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کیا فرماتے ہیں اگر کوئی بندہ غیر قوم کے گھر میں چلا جائے اور نماز کا وقت ہو جائے تو انکے گھر میں نماز پڑھنا کیسا ہے اس مسئلہ کو قرآن وحدیث کی روشنی میں جواب عنایت فرمائیں بہت مہربانی ہوگی

      سائل محمد فیضان رضا قادری پتہ حبیب پور الھند 
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
              وعلیکم السلام و رحمت اللہ و برکاتہ ، 

                      الجواب بعون اللہ التواب ،

نماز کے شرائط میں جس جگہ نمازپڑھی جائے اس کا جگہ کا پاک ہونا بھی شرط ہے ،بہار شریعت جلد اول حصہ سوم میں ہے مصلّی کے بدن کا حدث اکبر و اصغر اور نجاست حقیقیہ قدر مانع سے پاک ہونا، نیز اس کے کپڑے اور اس جگہ کا جس پر نماز پڑھے، نجاست حقیقیہ قدر مانع سے پاک ہونا۔(  المدینۃ العلمیہ کراچی)اب اگر غیر مسلم کے گھر میں جس جگہ نماز پڑھی جانے والی ہے کے پاک ہونے کا تیقن ہو اور وہ منع نہ کرے نیز اس گھر میں کوئی بت وغیرہ کی تصویر نہ ہو تو نماز پڑھنا جائز ہے ،اگر بت ہو اور اس پر کپڑے وغیرہ ڈال دئے جائیں تو بھی نماز پڑھنا جائز ہے، 

                           واللہ اعلم بالصواب 

کتبہ : محمد اخترعلی واجد القادری عفی عنہ ،خادم شمس العلماء دار الافتاء و القضاء ،جامعہ اسلامیہ میراروڈ ممبئی 19جون 2020ء

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only