قربانی کر کے پورا گوشت صدقہ کر دیا تو کیا حکم ہے

اَلسَّلَامُ عَلَيْكُمْ وَرَحْمَةُ اللّٰهِ وَبَرَكَاتُهُ‎

علماۓ کرام کی خدمت میں ایک مسٸلہ پیش ہے کہ کسی کے گھر شادی ہو اور وہ لوگ شادی کی وجہ سے قربانی نہیں کرا سکتیں ایسا کچھ انکا رسم وغیرہ ہے تو اگر وہ حصہ لے لیں اور گوشت بانٹ دیں تو کیا واجب ادا ہو جاٸیگی جواب عنایت فرماۓ مہربانی ہوگی 

المستفتی : محمد نور عالم تنسکیا
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ 

الجـــــــواب بعون الملکـــــ الوھاب 

صورتِ مسئولہ میں واجب ادا ہو جائے گی ـ مگر قربانی کا تھوڑا بھی گوشت نہ کھانا خلافِ مستحب ہے صدرالشریعة بدرالطریقة العلامة المفتي محمد امجد علی اعظمی عليه الرحمة والرضوان تحریر فرماتے ہیں کل گوشت صدقہ کردینا بھی جائز ہے (مگر کچھ کھا لینا مستحب) اور کل گوشت گھر ہی رکھ لے یہ بھی جائز ہے، (بہار شریعت ح ١٥ ص ٣٤٥) اور ایسی رسم ورواج کا فالور بننا شریعت سے بھٹکنا ہےایسی صورت میں ضروری ہے کہ قربانی کاگوشت کھائے چونکہ یہ رسم ورواج باطل محض ہیں ـ کہ گھر میں قربانی نہ کی جائے اور قربانی کا گوشت بھی نہ کھایا جائے.لہذا مسلمانوں پر لازم وضروری ہے کہ ایسی باطل وبے بنیاد رسمیں ختم کریں ـ اور شرعی احکام نافذ کریں. کہ اللّٰـــه جل جلالہ اپنا محبوب رکھے،

واللہ اعلم بالصواب 


کتبہ غـــلام محــــمــــدصـــــــــــدیقی فیضی متعـــــلم تخصـــص فی الفقہ سالِ دوم دارالعــــــلوم اھل ســـنت فـــــیض الرســـــول براؤں شریف سدھارتھ نگر یوپی الہند

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے