کیا چچا کی لڑکی کی لڑکی سے نکاح جائز ہے

اَلسَّــلَامْ عَلَیْڪُمْ وَرَحْمَةُ اللہِ وَبَرَڪَاتُہْ 

 کیا فرماتے ہیں علمائے دین و مفتیان شرع متین مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ کیا چچا کی لڑکی کی لڑکی سے نکاح جائز ہے برائے مہربانی مکمل طور پر جواب عنایت فرمائیں عین نوازش ہوگی 

مسائل محمد نفیس ملاواں ہردوئی یوپی

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرْکَتَہُ

الجواب الھم ہدایت الحق والصواب

زید اپنے چاچا کی لڑکی کی لڑکی سے نکاح کر سکتا ہے کوئی حرج نہیں جیسا کہ قرآن مجید میں ان عورتوں کا ذکر کرتے ہوئے جن سے نکاح حرام ہے حق تعالی نے ارشاد فرمایا وَاُحِلَّ لَـكُمۡ مَّا وَرَآءَ ذٰ لِكُمۡ اور ان (محرمات) کے سوا اور عورتیں تم کو حلال ہیں سورۃ نمبر 4 النساءآیت نمبر 24) اور چاچاکی لڑکی کی لڑکی ان عورتوں میں نہیں جو حرام ہیں لہذا چاچا کی لڑکی اور لڑکی کی لڑکی دونوں سے نکاح جائز ہے


واللہ و رسولہ اعلم باالصواب


کتبـــــــــــــــــــــــــــہ العبـــد خاکســـار ناچیـــز محمـــد شفیـــق رضـــا رضـــوی خطیـــب و امـــام سنّـــی مسجـــد حضـــرت منصـــور شـــاہ رحمتـــ اللـــہ علیـــہ بـــس اسٹاپـــ کشـــن پـــور الھنـــد

ایک تبصرہ شائع کریں

2 تبصرے

  1. Hamare gao me juma ke baad zohar padhate hai
    To juma ki niyat aur zohar ki niyat dono farz ki bandhe ya fir koi aur tariqa h

    جواب دیںحذف کریں
  2. Ek waqt me do farz hote nahi to juma ke baad zohar padhate hai huzur niyat kaise hoti hai jean inayat farmaye

    جواب دیںحذف کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ