ننگے سر تلاوت قرآن پڑھنا کیسا ہے

السلام علیکم ورحمتہ اللہ و برکاتہ
کیا فرماتے ہیں علمائے کرام و مفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ ننگے سر تلاوت قرآن پاک کرنا کیسا ہے ؟ برائے مہربانی مکمل طور پر جواب عنایت فرمائیں عین نوازش ہوگی ۔ فقط والسلام
سائل : محمد وار
ث علی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
وعلیکم السلام و رحمۃ اللّٰہ و برکاتہ
 *جواب* مرد و عورت تلاوت قرآن مجید کے وقت اپنے سر کو ڈھانپ لینا بہتر ہے کیونکہ قرآن مجید کلام اللہ ہے اس لئے آداب کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے اس کی عظمت و توقیر ہم پر ضروری ہے تاکہ اس کی برکات سے مستفید ہو سکیں لہذا برہنہ سر تلاوت کلام اللہ کرنا خلاف ادب ہے جیسا کہ فتاوی عالمگیری میں ہے کہ " رجل اراد ان یقرا القرآن فینبغی ان یکون علی احسن احواله یلبس صالح ثیابه و یتعمم و یستقبل القبلة لان تعظیم القرآن والفقه واجب " اھ ( فتاوی عالمگیری ج 5 ص 316 : کتاب الکراھیة ، الباب الاربع ، مطبوعہ رشیدیہ )

واللہ اعلم باالصواب
مفتی کریم اللہ رضوی صاحب قبلہ 

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے