کیا نابالغ بچے آپس میں جماعت کر سکتے ہیں؟




              السلام علیکم رحمۃ اللہ و برکاتہ

سوال کیا فرماتے ہیں علماٸے کرام و مفتیان کرام اس مسٸلہ کے بارے میں کہ صرف نابالغ بچے ہی حاضر ہوں تو کیا جماعت قائم ہوسکتی ہے 

            سائل محمد شبیر احمددیوریا یو پی

:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::

              وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎

                   الجواب بعون المک الوہاب 

 نابالغوں کی جماعت بھی ہو سکتی ہے اور نابالغوں کی امامت کے لیے بالغ کا ہونا شرط نہیں اگر ان میں کوٸی نابالغ سمجھدار ہے تو وہ ان سب کی امامت بھی کر سکتا ہے بہار شریعت حصہ سوم صفحہ 561البتہ نابالغ امام کے پیچھے بالغ کی نماز نہیں ہوگی

                   واللہ اعلم باالــــــصـــــواب 

عبیداللہ بریلوی خادم تدریس مدرسہ دارارقم محمدیہ میرگنج بریلی شریف

            اســـلامی مـــعلــومـات گـــــروپ 

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے