کیا حائضہ قرآن مجید پڑھ سکتی ہے؟؟؟


            اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎

 کیا فرماتے ہیں علماء کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ کیا عورت حیض کی حالت میں قرآن پاک کی تلاوت کر سکتی ہیں یا درود پاک پڑھ سکتی ہیں برائے مہربانی مکمل طور پر جواب عنایت فرمائیں عین نوازش ہوگی فقط والسلام

       سائل محمد شاکر رضوی جہان آباد الھند
:::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::::
            وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

             الجواب اللھم ھدایۃ الحق الصواب

حیض کی حالت میں عورت کوقرآن پڑھناچھوناحرام ہےجیساکہ سرکارصدرالشریعہ علیہ الرحمہ فرماتےہیں حَیض و نِفاس والی عورت کو قرآنِ مجید پڑھنا دیکھ کر، یا زبانی اور اس کا چھونا اگرچہ اس کی جلد یا چولی یا حاشیہ کو ہاتھ یا انگلی کی نوک یا بدن کا کوئی حصہ لگے یہ سب حرام ہیں یونہی جس کاغذ کے پرچے پر کوئی سورہ یا آیت لکھی ہواس کا بھی چھونا حرام ہےہاں اگرجزدان میں قرآنِ مجید ہو تو اُس جزدان کے چھونے میں حَرَج نہیں یونہی کسی کپڑے وغیرہ سے بھی شھوسکتی ہے مگر دامن یا دوپٹے کے آنچل سے یا کسی ایسے کپڑے سے جس کو پہنے، اوڑھے ہوئے ہے قرآنِ مجید چُھونا حرام ہے غرض اس حالت میں قرآنِ مجید و کتب ِدینیہ پڑھنااورچھونادونوں حرام ہیں البتہ وظیفہ کی نیت سے قرآنی آیت پڑھ سکتی ہے جیسے فاتحہ آیۃ الکرسی سورہ اخلاص وغیرہ(بہارشریعت حصہ دوم بیان)حیض ونفاس کےمتعلق احکام

                   واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

             کتبہ محمد افسر رضا سعدی عفی عنہ

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے