4.15.2020

کیا کوئی دوبارہ سے جنم لے سکتا ہے؟؟؟

            السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ کیا کسی کی روح کسی کے جسم میں داخل ہو سکتی ہے جیسا کہ بعض جگہ پر یہ کہا جاتا ہے کہ یہ میرا بھائی پیدا ہوا ہے جس کا انتقال ہو گیا تھا ایسا عقیدہ رکھنا کیسا ہے برائے مہربانی مکمل طور پر جواب عنایت فرمائیں عین نوازش ہوگی 

            سائل محمد توقیر رضا حشمتی
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
          وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

            الجوابـــــ بعون الملکـــــ الوھاب 

 انسان بلکہ ہر جاندار صِرف ایک ہی بار پیدا ہوتا ہے ۔ مرنے والے کی روح کسی جسم میں داخِل ہو کر دوبارہ جنم لیکر دنیا میں نہیں آتی ۔ ایسا عقیدہ رکھنا کفر ہے ۔ دعوتِ اسلامی کے اشاعتی ادارے مکتبۃ المدینہ کی مطبوعہ 1250 صَفحات پر مشتمل کتاب بہارِ شریعت جلد اوّل صَفْحَہ 103پر صدرُالشَّریعہ، بدرُ الطَّریقہ حضرتِ علّامہ مولیٰنامفتی محمد امجد علی اعظمی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ القَوِی فرماتے ہیں یہ خیال کہ وہ روح کسی دوسرے بدن میں چلی جاتی ہے خواہ وہ آدمی کا بدن ہو یا کسی اور جانور کا جس کوتَناسُخاور آواگون کہتے ہیں ۔ محض باطِل اور اُسکا ماننا کُفر ہے (بہارِ شریعت )لہذا ایساعقیدہ رکھنے والاکافر ہوگیا اس ہر تجدید ایمان اور شادی شدہ ہو تو تجدید نکاح لازم ہے

                 واللّٰہ ورسولہ اعلم باالصواب
      
کتبہ ناچیز محمد شفیق رضا رضوی خطیب و امام سنّی مسجد حضرت منصور شاہ رحمت اللہ علیہ بس اسٹاپ کشن پور الھند

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only