4.25.2020

کیا نوافل بیٹھ کر پڑھنے سے ادا ہو جائے گی


        السلام علیکم ورحمۃاللہ تعالیٰ وبرکاتہ 

کیا فرماتے ہیں علمائے دین مسئلہ ذیل میں کہ نماز میں قیام شرط ہے تو نفل نماز بیٹھکر جب پڑھتے ہیں تو قیام چھوٹ جاتا ہے تو کیا ایسے نفل نماز ہو جائے گی جبکہ ایک شرط فوت ہوگئی مدلل جواب عنایت فرمائیں؟

سائل حافظ محمد اخلاق رضا ہرسنگھ پور نگھاسن لکھیم پور کھیری
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
          وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

               الجواب بعون الملک الوہاب

اولا یہ جان لیجئے کہ نوافل نماز کیلئے قیام شرط نہیں ہے اوریہ سوچناکہ اگرکوئی شخص بیٹھ کر نفل نمازپڑ ھےتونمازنہیں ہوگی ایسانہیں ہے ااگرکوئی شخص بیٹھ کرنفل نمازپڑھتاہےبلاعذرشرعی تب بھی اس کی نمازہوجائے گی یہ الگ بات ہے کہ کھڑےہوکرپڑھنے سے جوثواب ملتا ہے اس سےمحروم رہ جائےگا جیساکہ سرکار صدرالشریعہ علیہ الرحمہ فرماتےہیں کہ فرض ووتروعیدین وسنت فجرمیں قیام فرض ہےکہ بلاعذرصحیح بیٹھ کریہ نمازیں پڑھےگانہ ہوں گی اورآگے فرماتےہیں کہ اگرکسی شخص نےنفل نمازکیلئے تکبیرتحریمہ رکوع میں کہی تونمازنہ ہوئی اوربیٹھ کرکہتاتوہوجاتی بہارشریعت جلداول حصہ سوم فرائض نماز کابیان اس سے معلوم ہواکہ نوافل کیلئے قیام شرط نہیں ہے اگرنوافل کیلئے قیام شرط ہوتاتوصاحب بہارشریعت اس کاذکر ضرورفرماتےتو اگرکوئی شخص بیٹھ کرنفل نمازپڑھےتونمازہوجائے گی لیکن بہتر یہی ہےکہ اگرطاقت رکھتاہے بھرپورتوکھڑےہوکرہی پڑھے تاکہ زیادہ ثواب پائے 

                 واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب 

         محمدافسررضاحشمتی سعدی عفی عنہ

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

Whatsapp Button works on Mobile Device only