4.11.2020

پرانی قبر کھل جائے تو کیا حکم ہے

               السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام و مفتیان کرام کہ بوسیدہ قبر پر مٹی ڈالنا کیسا ہے یا قبر کھلی ہو اس پر مٹی ڈال سکتے ہیں یا نہیں جواب عنایت فرمائیں

                   سائل محمد شاکر رضوی
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
             وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎ 

                الجواب بعون الملک الوہاب 

اگر بارِش یا کسی بھی سبب سے قبر کُھل جائے اور مُردے کی ہڈِّیاں وغیرہ نظر آنے لگیں تو اُس قَبْر کو مِٹّی سے بند کر دینا ضَروری ہے اور کم کے مقدار میں قبر کھلی تو بھی مٹی دے کر بند کر دینا جاٸز ہے جیسا کہ سرکار اعلی حضرت رحمة اللہ علیہ کی بارگاہ میں سوال ہوا کہ قدیم قبراگر کسی وجہ سے کُھل جائے یعنی اُس کی مـٹّی الگ ہو جائے اورمُردے کی ہڈِّیاں وغیرہ ظاہِر ہونے لگیں تو اِس صورت میں قبر کو مٹّی دینا جائز ہے یا نہیں ؟ سرکار اعلی حضرت رحمة اللہ علیہ جواب تحریر فرماتے ہیں کہ اس صورت میں اُسے مِٹّی دینا فَقَط جائز ہی نہیں بلکہ واجِب ہے کہ سَتْرِ مسلِم(یعنی مسلمان کا پردہ رکھنا) لازِم ہے (فتاوٰی رضویہ ج ۹ ص ٤٠٤ رضا فاٶنڈیشن لاہور )

                  واللہ اعلم و رسولہ باالصواب 

  الفقیر جابرالقادری رضوی مسجد نور جاجپور اڑیسہ

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only