کیا نبی کریم صل اللہ علیہ والہ وسلم خود درود پاک سماعت کرتے ہیں


            اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎

جب کوٸی مسلمان آقا علیہ السلام پر درود سلام پڑھتا ہے، اپنی اپنی جگہ سے تو آقا ﷺ اسے خود سنتے ہیں یا فرشتے آپ ﷺ کے پاس پہنچاتے ہیں ؟؟؟؟؟

              نوشاد عالم رضوی بمقام کٹہار
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
           وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ 

                الجواب بعون الملک الوہاب 

جب کوئی بندہ نبی.کریم.صلی اللہ علیہ وسلم پر درود بھیجتا ہے تو نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلّم خود درو سنتے ہیں اور فرشتے بھی پہنچاتے ہیں یعنی دونوں طرح روایت کتب احادیث میں مذکور ہے ملاحظہ ہو عن أبي هريرة رضي الله عنه قال : قال النبي صلي الله عليه وآله وسلم من صلي عَلَيَّ عند قبري سمعته ومن صلي عَلَيَّ نائياً أبلغته ترجمہ حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا جو میری قبر کے نزدیک مجھ پر درود پڑھتا ہے میں خود اس کو سنتا ہوں اور جو دور سے مجھ پر درود بھیجتا ہے وہ (بھی) مجھے پہنچا دیا جاتا ہے۔ (بيهقي، شعب الايمان، 2 : 218، رقم : 1583)(۲) عن عقبة بن عامرقال : قال رسول اﷲ صلي الله عليه وآله وسلم إذا صليتم عَلَيَّ فأحسنوا الصلاة فإنکم لا تدرون لعل ذلک يعرض عَلَيَّ.ترجمہ : حضرت عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا جب تم مجھ پر درود بھیجو تو نہایت خوبصورت انداز سے بھیجو کیونکہ شاید تم نہیں جانتے کہ تمہارا درود مجھے پیش کیا جاتا ہے۔ (هندي، کنزالعمال، 1 : 497، رقم : 2193، باب الصلاة عليه صلي الله عليه وآله وسلم)اس طرح کی کئی ایک احادیث طیبہ کتب احادیث میں موجود ہیں جن کا خلاصہ یہ ہے کہ حضور علیہ السلام سنتے بھی ہیں بذریعہ فرشتہ پہونچتا بھی ہے.

                        واللہ اعلم بالصواب

کتبہ ناچیز محمد شفیق رضا رضوی خطیب و امام سنّی مسجد حضرت منصور شاہ رحمت اللہ علیہ بس اسٹاپ کشن پور الھند

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے