7.16.2020

چھری میں اگر3سراک نہ ہو تو کیا جانور ذبح نہیں ہوگا

اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ 

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ جس چھری میں اگر3سراک نہیں ہےتواس چھری سےجانورکوحلال کرناکیساہے جانورحلال ہوجائےگا یا نہیں برائے مہربانی مکمل طور پر جواب عنایت فرمائیں عین نوازش ہوگی

سائل محمد افروز عالم بگہٹہ
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
وعلیکم السلام ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

الجواب بعون المک الوھاب۔

وقت ذبح چھری کاتیزہونا ضروری ہے .چھری میں سوراخ کاہوناضروری نہیں کہ ذبح کرنے کا مقصد ہے خون بہانا اور یہ ہرتیز دھاردار اوزار کی جاسکتی ہے اس کے لئے سوراخ ہونا حتی کی چھری کا ہونا بھی شرط نہیں ہے جیسا کہ حضورصدرالشریعہ تحریر فرماتے ہیں ذبح ہراس چیزسے کرسکتےہیں جورگیں کاٹ دےاور خون بہادے۔یہ ضروری نہیں کہ چھری ہی سے ذبح کریں بلکہ کھپچی اوردھاردارپتھر سے بھی ذبح ہوسکتاہے.بہارشریعت جلدسوم حصہ پندرہ صفحہ نمبر/314/

واللہ اعلم بالصواب

کتبہ۔ محمدالطاف حسین قادری خادم التدریس دارالعلوم غوث الوری ڈانگا لکھیم پورکھیری یوپی موبائیل۔/9454675382

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only