حالت نماز میں امام کا انتقال ہو جائے تو نماز کیسے ادا کرے

السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

ایک سوال عرض ہے کہ امام کا پہلی رکعت میں سجدے میں انتقال ہوگیا تو مقتدی کیا کرے ؟؟ 

سائل: ابو حامد (سدھارتھ نگر)
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ 

الجواب بعون الملک الوہاب 

صورت مستفسرہ میں مقتدیوں کی نماز باطل ہوگئی از سر نو نماز دوبارہ پڑھیں جیساکہ حضور صدر الشریعہ بدر الطریقہ علیہ الرحمۃ والرضوان بھار شریعت میں تحریر فرماتے ہیں نماز میں امام کا انتقال ہوگیا اگرچہ قعدۂ اخیرہ میں تو مقتدیوں کی نماز باطل ہوگئی سرے سے پڑھنا ضروری ہے " اھ( ح:3/ص:603/ خلیفہ کرنے کا بیان / مجلس المدینۃ العلمیۃ دعوت اسلامی) اور درمختار میں ہے و موت و جنون و اغماء " اھ اور خاتم المحققین علامہ ابن عابدین شامی قدس سرہ السامی ردالمحتار میں تحریر فرماتے ہیں "( موت) أقول : تظھر ثمرتہ فی الامام لو مات بعد القعدۃ الأخیرۃ بطلت صلاۃ المقتدیین بہ فیلزمھم استثنافھا " اھ( ج:2/ص:391/ کتاب الصلاۃ / باب ما یفسد الصلاۃ وما یکرہ فیھا / دار عالم الکتب) اور بدائع الصنائع میں ہے و منھا : الموت فی الصلاۃ والجنون والاغماء فیھا أما الموت فظاھر لأنہ معجز عن المضی فیھا " اھ( ج:2/ص:145/ فصل فی بیان حکم الاستخلاف / دار الکتب العلمیۃ) 

واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب 

کتبہ اسرار احمد نوری بریلوی خادم التدریس والافتاء مدرسہ عربیہ اہل سنت فیض العلوم کالا ڈھونگی ضلع نینی تال اتراکھنڈ 12---جولائی---2020---بروز اتوار

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے