11.26.2020

امام صاحب کا حجام کے گھر کھانا کھانا کیسا ہے

السلامُ علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین مسلہ ذیل کےبارےمیں کہ ایک شخص جو مسجد کا امام ہے اس امام کا حجام کے گھر پہ کھانا کھانا کیسا ہے 

المستفتی محمد سجاد عالم

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرْکَتَہُ 


الجواب الھم ہدایت الحق والصواب


امام صاحب کا مسلمان حجام کے یہاں کھانا کھانے میں کوئی حرج نہیں لیکن نہ کھانا زیادہ بہتر ہے کیونکہ ناجائز کام پر اجرت لینا بھی ناجائز و حرام ہے جیسا کہ درالمختار میں ہے کہ و لا تصح الاجارة لاجل المعاصى مثل الغناء و النوح و الملاهى اھ ( ج ٦ ص ۵۵ ) اور البحر الرائق میں ہے کہ و ان اعطاها الأجر و قبضه لا يحل له و يجب عليه رده على صاحبه اھ ( ج ۸ ص ۲۰ )اور جیسا کہ فتاویٰ مرکز ترتیب افتاء میں ہے کہ علماء فقہاء حفاظ قراء ائمہ کو حجام کے یہاں کھانے سے احتراز کرنا چاہئے تاکہ اس سے لوگوں کو عبرت ہو (بحوالہ فتاوی مرکز تربیت افتاء جلد دوم صفحہ ۵۳۱ ۵۳۲ ){مطبع فقیہ ملت اکیڈمی اوجھا گنج بستی}


واللہ رسولہ اعلم باالصواب


کتبـــــــــــــــــــــــــــہ العبـــد خاکســـار ناچیـــز محمـــد شفیـــق رضـــا رضـــوی خطیـــب و امـــام سنّـــی مسجـــد حضـــرت منصـــور شـــاہ رحمتـــ اللـــہ علیـــہ بـــس اسٹاپـــ کشـــن پـــور الھنـــد 

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only