افطار کی دعا روزہ کھولنے کے بعد پڑھے یا پہلے

Gumbade AalaHazrat

سوال
  کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں جو رمضان شریف میں افطار کی دعا ہے وہ روزہ کھولنے کے بعد پڑھنی چاہیے یا روزہ کھولنے سے پہلے وہ دعا پڑھ کر افطار کرنا چاہیے جواب دے کر شکریہ کا موقع دے المستفی محمد مبارک حسین رضوی بہرائچ شریف

       جواب

دعا روزہ کھولنےکے بعد یعنی افطار کے بعد پڑھنا چاہیۓ
حدیث شریف میں ہے عن معاذبن زھرة أنہ بلغہ أن النبی ﷺ کان إذا أفطر قال اللھم لک صمت وعلیٰ رزقک أفطرت
حضرت معاذ بن زھرہ روایت کرتے ہیں کہ نبی کریم ﷺ جب افطار فرمالیتے تو یہ دعا پڑھتے یاﷲ میں نے تیرےلیۓ روزہ رکھا اور تیرے رزق سےافطار کیا سنن أبی داؤد ، کتاب الصیام ، صفحہ ٣٢٢ {مکتبہ زکریابک ڈپو}
اعلیٰ حضرت رضی اللہ عنہ نے دعاء بعد الافطار کے متعلق احادیث و اقوال فقہاء عظام و علماءکرام و خودکی تحقیق انیق کی روشنی میں ایک طویل بحث فرماٸی ہے جس کا جواب ھذا میں بیان کرنا ساٸل کو عالم فکر میں محو کرنا ہے! آپ رضی اللہ عنہ نے یہی ثابت فرمایا ہے کہ دعا بعدافطار پڑھنا چاہیے کہ یہی افضل ہے

فتاویٰ رضویہ ، جلد١٠ ، ص ٦٤١ {رضافاٶنڈیشن لاہور}
واللہ ورسولہ اعلم بالصواب 

کتبہ عبیداللّٰه حنفی بریلوی

خادم التدریس جامعہ عربیہ فیض الرسول و امام جامع مسجد قصبہ رچھا ضلع بریلی شریف

ایک تبصرہ شائع کریں

1 تبصرے

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ