8.10.2022

امام حسین کو علیہ السلام کہنا کیسا

Gumbade AalaHazrat

سوال
  حضرت امام حسین رضی اللہ عنہ یا دیگر اولیاء کرام کے ساتھ "علیہ السلام "لکھنے کا کیا حکم ہے؟ اس تعلق سے کوئی تحریر یاجواب ہو تو عنایت فرمائیں۔وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ المستفی محمد ساھل ازہری

       جواب

صورت مستفسرہ کے تحت
اعلیٰ حضرت علیہ الرحمہ فرماتے ہیں علیہ السلام'' لفظ بالاستقلال حضرات انبیائے کرام وملائکہ عظام علیہم الصلوۃ والسلام کے لئے خاص ہے ان کے غیر کے لئے استقلالا جائز نہیں حضور پر نور سیدناغوث اعظم رضی اللہ تعالی عنہ کے لئے رضی اللہ تعالی عنہ کہنا چاہئے (فتاویٰ رضویہ ج ۱۹) حضرتِ صدرُ الشَّریعہ، بدرُ الطَّریقہ علّامہ مفتی محمد امجد علی اعظمی عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللہِ القَوِی کی خدمت میں سُوال ہوا یاحُسین عَلَیْہِ السَّلَام کہنا جائز ہے یا نہیں اور ایسا لکھنا بھی کیسا ہے اور پکارنا کیسا ہے ؟
حضور صدرالشریعہ علیہ الرحمۃ والرضوان جواباً ارشاد فرماتے ہیں کہ یہ سلام جو نام کے ساتھ ذِکر کیا جاتا ہے یہ سلامِ تَحِیَّت نہیں (یعنی ملاقات کا سلام) نہیں جو باہم ملاقات کے وَقت کہا جاتا ہے یا کسی ذَرِیعہ سے کہلایا جاتا ہے بلکہ اس (یعنی عَلَیْہِ السَّلَام )سے مقصود صاحِبِ اِسم(یعنی جس کانام ہے اُس) کی تعظیم ہے ۔ عُرفِ اَہلِ اسلام نے اس سلام (یعنی عَلَیْہِ السَّلَام لکھنے بولنے ) کو انبِیاء و ملائکہ کے ساتھ خاص کر دیا ہے ۔ مَثَلاً حضرتِ ابراھیم عَلَیْہِ السَّلَام حضرتِ موسیٰ عَلَیْہِ السَّلَام حضرتِ جبرئیل عَلَیْہِ السَّلَام حضرتِ میکائیل عَلَیْہِ السَّلَام ۔ لہٰذا غیرنبی و مَلَک(نبی اور فرشتے کے علاوہ)کے نام کے ساتھ عَلَیْہِ السَّلَام نہیں کہنا چاہئے

(فتاویٰ امجدیہ جلد 4 صفحہ نمبر 143 تا 145)
واللہ ورسولہ اعلم بالصواب 

کتبہ کتبہ جمال احمد رضوی

بروز سوموار

ایک تبصرہ شائع کریں

براۓ مہربانی کمینٹ سیکشن میں بحث و مباحثہ نہ کریں، پوسٹ میں کچھ کمی نظر آۓ تو اہل علم حضرات مطلع کریں جزاک اللہ

فـہـرسـت گـــــروپ مـنـتـظـمـیـن

...
رابـطـہ کــــریـں

Whatsapp Button works on Mobile Device only