پہلی رات دلہن ادلی بدلی ہو جائے تو کیا حکم ہے

Gumbade AalaHazrat

سوال
  کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں دو سگے بھائیوں کی شادی دو سگی بہنوں کے ساتھ ہوگی لیکن رات میں غلطی سے دلہن ادلی بدلی ہو گئی بڑا بھائی چھوٹے والے بھائی کی بیوی کے پاس چلا گیا اور چھوٹا بھائی بڑے والے بیوی کے پاس چلا گیا اور ان چاروں حضرات کے درمیان مباشرت بھی پائی گئی جب معلوم ہوا کہ ہم تو غلط چلے گئے ہمیں جانا کسی اور کے پاس تھا ہم چلے کسی اور کے پاس گئے ہیں اب چاروں حضرات کیا کرے ان کے لیے کیا حکم ہے قرآن و حدیث کی روشنی میں جواب دے کر شکریہ کا موقع دیں المستفی محمد قاری نزاکت حسین پاکستان

       جواب

صورت مسؤلہ میں دونوں بھائی اپنی اپنی منکوحہ کو طلاق دے دیں اور پھر جس نے جس سے مباشرت کی ہے اس سے نکاح کرلے یہی حکم بیان فرمایا ہے
حضور تاجدار اہل سنت مفتی اعظم عالم اسلام سیدی مفتی اعظم ہند علیہ الرحمہ نے اسی قسم کے ایک سوال کے جواب میں چنانچہ رقمطراز ہیں ایسا حضور امام اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے زمانہ مبارک میں بھی واقع ہوا امام نےدونوں بھائیوں سے طلاق دلواکر جس نے جس سے صحبت کی تھی اس سے اسی کا نکاح کرادیا یونہی اب بھی کرلیں

(فتاویٰ مصطفویہ ص ٣٠٧)
واللہ ورسولہ اعلم بالصواب 

کتبہ محمد مزمل حسین نوری مصباحی

مقام دھانگڑھا کشن گنج بہار

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے